Aaj TV News

BR100 4,597 Increased By ▲ 11 (0.24%)
BR30 17,781 Increased By ▲ 212 (1.21%)
KSE100 45,018 Increased By ▲ 192 (0.43%)
KSE30 17,748 Increased By ▲ 82 (0.46%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,360,019 6,540
DEATHS 29,077 12
Sindh 520,415 Cases
Punjab 460,335 Cases
Balochistan 33,855 Cases
Islamabad 115,939 Cases
KP 183,865 Cases

سری لنکن فیکٹری مینیجر پریانتھا کمارا پروحشیانہ تشدد اور بہیمانہ قتل کے بعد ٹوئٹر پر عوام کی بڑی تعداد حکومت سے انتہا پسند جماعتوں پر پابندی کا مطالبہ کر رہی ہے ۔

افسوس ناک واقعے پروفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ " ہم نے معاشرے میں ٹائم بم لگا دئیے ہیں ان بموں کو ناکارہ نہ کیا تو وہ پھٹیں گے ہی اور کیا کریں گے" انہوں نے مزید کہاکہ وقت ریت کی طرح ہاتھوں سے نکل رہا ہے بہت توجہ چاہئے۔

فواد چوہدری ے اس سے قبل ٹی ایل پی کے حامیوں کی جانب سے رنجیت سنگھ کے مجسمے کو مسمار کرنے کے عمل کو پاکستان کے لیےنقصان دہ قرار دیا تھا۔

تاہم سیالکوٹ کے واقعے نے حکومت کو سوالوں کے کٹہرے میں لاکر کھڑا کر دیا ہے جب کہ حکمران جماعت کی قیادت مذکورہ واقعے سے دوری اختیار کررہی ہے۔

اس وحشیانہ قتل کی تمام سیاسی و مذہبی سمیت سماجی تنظیموں کی جانب سے مذمت کی گئی ہے مگر سوشل میڈیا صارفین یہ مطالبہ کررہے ہیں کہ انتہاپسند جماعتوں پر پابندی لگائی جائے ۔ اس کے ساتھ ہی ٹوئٹر پر ٹی ایل پی کودہشت گرد قرار دینے کے ٹرینڈ بھی مقبول رہے ۔

واقعے کی جگہ پر ایک شخص کی جلتی لاش کے ساتھ سیلفی لینے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل رہی، جس نے لوگوں کو دہلا کر رکھ دیا۔ سوشل میڈیا صارفین نے اس عمل پر ٹی ایل پی کے سربراہ سعد رضوی پر غصے کا اظہار کیا گیا۔

ایک صارف نے کہا کہ سائنس اور ٹیکنالوجی پر سرمایہ کاری کرنے کے بجائے ہم مخصوص ذہنیت کے لوگ پیدا کررہے ہیں یہی وجہ ہے کہ دنیا کی بڑی کمپنیوں پر بھارتی قابض ہیں۔

ایک اور صارف نے ٹوئٹ میں لکھا کہ اس واقعے نے اسلام کے امن کے پیغام کو نقصان پہنچایا ہے، جو ٹوئیٹر پر واضح ہورہا ہے۔

اسی حوالے سے ایک صارف نے سوال اٹھایا کہ انتہا پسند گروہوں کے ساتھ مذاکرات کرنے میں ریاست کا کردار رہا ہے جس کی وجہ سے عوام کو ان معاہدوں کی قیمت ادا کرنی پڑتی ہے۔