Aaj TV News

BR100 4,623 Increased By ▲ 6 (0.12%)
BR30 17,917 Increased By ▲ 191 (1.08%)
KSE100 45,078 Decreased By ▼ -5 (-0.01%)
KSE30 17,793 Decreased By ▼ -35 (-0.2%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,402,070 8,183
DEATHS 29,192 30
Sindh 535,965 Cases
Punjab 471,925 Cases
Balochistan 34,187 Cases
Islamabad 123,648 Cases
KP 189,300 Cases

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے سابق معاون خصوصی عون چوہدریعہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ بلا کر کہا گیا جہانگیر ترین کو چھوڑو یا عہدہ۔ اس پر گروپ سے علیحدگی کے بجائے استعفے کو ترجیح دی۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے عون چوہدری کو طلب کیا تھا۔ عون چوہدری پر جہانگیر ترین گروپ کے لیے لابنگ کا الزام تھا۔

عون چوہدری نے اپنے استعفے میں لکھا کہ انہیں وزیراعلیٰ آفس بلاکر ترین گروپ سے علیحدگی یا استعفیٰ کا کہاگیا اور انہوں نے جہانگیر ترین گروپ سے علیحدگی کے بجائے استعفے کو ترجیح دی۔

عون چوہدری کہتے ہیں کہ ہر کوئی جہانگیر ترین کی پارٹی کے لیے خدمات کا معترف ہے، انہوں نے 2018 انتخابات میں کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔ پنجاب اور مرکز میں حکومت کے قیام میں بھی جہانگیر ترین نے اہم کردار ادا کیا۔

دوسری طرف عون چوہدری سے استعفیٰ لیے جانے پر ردعمل دیتے ہوئے راجہ ریاض نے کہا ہے کہ ان سے بھی استعفے طلب کیے گئے تو وہ بھی تیار ہیں۔ استعفے مانگے گئے تو دے دیں گے لیکن جہانگیر ترین کو نہیں چھوڑیں گے۔

راجہ ریاض کا کہنا تھا کہ آئندہ چند روز میں مشترکہ فیصلہ کریں گے، دباؤ ڈال کر استعفے لینے سے پارٹی کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔