Aaj TV News

BR100 4,623 Increased By ▲ 6 (0.12%)
BR30 17,917 Increased By ▲ 191 (1.08%)
KSE100 45,078 Decreased By ▼ -5 (-0.01%)
KSE30 17,793 Decreased By ▼ -35 (-0.2%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,402,070 8,183
DEATHS 29,192 30
Sindh 535,965 Cases
Punjab 471,925 Cases
Balochistan 34,187 Cases
Islamabad 123,648 Cases
KP 189,300 Cases

بیس سال قبل دنیا میں امن قائم کرنے کے لیے افغانستان میں ایک نا جیتی جا سکنے والی جنگ چھیڑنے والے امریکا کو آج افغانستان کا نام تک بُرا لگنے لگا ہے، امریکی صدر جو بائیڈن افغانستان سے متعلق صحافیوں کے سوالات تک سننے سے چڑنے لگے ہیں۔

جس سے اس بات کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ امریکا، افغان جنگ سے کس حد تک بیزار ہوچکا ہے۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے افغانستان سے متعلق صحافیوں کے سوالات کے جواب دینے سے صاف انکار کرتے ہوئے کہا، 'افغانستان کو چھوڑیں، منفی سوالات نہیں، کچھ اچھی بات کریں۔'

بائیڈن نے انخلا کے منصوبوں، محصور سویلین افغان حکومت سے ان کی امیدوں اور امریکی فضائی مدد کے بارے میں ان کے نظریات تفصیلاً بیان کرنے کے بعد کہا، 'میں افغانستان کے بارے میں مزید سوالوں کے جواب نہیں دوں گا۔'

بائیڈن نے مایوسی کے عالم میں اپنے ہاتھوں سے اشارہ کرتے ہوئے کہا ، 'دیکھیں یہ چار جولائی (امریکی یومِ آزادی) ہے۔ مجھے تشویش ہے کہ آپ لوگ مجھ سے سوالات پوچھ رہے ہیں جس کا جواب میں اگلے ہفتے دوں گا۔ یہ چھٹی کا ہفتہ ہے ، میں اسے منانے جا رہا ہوں۔ بہت بڑی چیزیں رونما ہورہی ہیں۔'

دفاعی مبصرین کا کہنا ہے امریکی صدر کے بیان سے امریکی پالیسی واضح ہوگئی ہے کہ افغانستان اب امریکہ کی ترجیحات میں شامل نہیں۔