Aaj TV News

BR100 4,979 Decreased By ▼ -47 (-0.94%)
BR30 24,460 Decreased By ▼ -313 (-1.26%)
KSE100 46,636 Decreased By ▼ -284 (-0.61%)
KSE30 18,480 Decreased By ▼ -178 (-0.95%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,218,749 2,928
DEATHS 27,072 68
Sindh 448,658 Cases
Punjab 419,423 Cases
Balochistan 32,707 Cases
Islamabad 103,720 Cases
KP 170,391 Cases

سابق برطانوی وزیر اعظم گورڈن براؤن نے کہا ہے کہ حال ہی میں ہونے والی جی 7 سمٹ کو 'ناقابلِ معافی اخلاقی شکست' کے طور پر یاد رکھا جائے گا۔

گورڈن براؤن نےبرطانوی نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے خبردار کیا کہ گزشتہ ہفتے کارن وال میں موقع ضائع ہونے کے نتیجے میں غریب اقوام میں ویکسین سے محروم لاکھوں افراد وباء کے ہاتھوں ہلاک ہوجائیں گے۔

گزشتہ روز جی سیون ممالک نے اگلے سال تک 1 ارب ویکسینز فراہم کرنے کا اعلان کیا۔

تاہم سابق وزیر اعظم نے اس اعلان پر کڑی تنقید کی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ پوری دنیا کی آبادی کی ویکسینشن ہونے سے ہی پیدا ہونے والی کووڈ کی نئی اقسام سے بچا جاسکتا ہے ساتھ ہی بےشمار قیمتی زندگیاں بھی بچائی جاسکتی ہیں۔

گورڈن براؤن کا کہنا تھا کہ جب ہمیں 11 ارب ویکسینز کی ضرورت ہے ہمیں صرف 1 ارب ویکسینز کا منصوبہ پیش کیا گیا۔

انہوں نے کہا یہ سمٹ 'ناقابلِ معافی اخلاقی شکست' کے طور پر یاد رکھی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں امیر ممالک جو محفوظ ہیں اور غریب مملک جو محفوظ نہیں ہیں، کے درمیان تقسیم کا مسئلہ درپیش ہے۔

انہوں نے مزید کہا یہ وباء امیر ممالک کو پھر خطرے میں ڈالے گی کیوں کہ ویکسین لگنے کے باوجود اس کی نئی اقسام لوگوں کو متاثر کرے گی۔

واضح رہے جی 7 ممالک کے اعلان کے مطابق امید کی جارہی ہے کہ آئندہ 12 ماہ میں برطانیہ 10 کروڑ ڈوزز فراہم کرےگا۔ جبکہ امریکی صدر جو بائیڈن پہلے ہی 92 غریب ممالک اور افریقن یونین کو 50 کروڑ فائزر دینے کا وعدہ کرچکے ہیں۔

واضح رہےعالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ دنیا کی 70 فیصد آبادی کو ویکسینیٹ کرنے اور ہرڈ امیونیٹی حاصل کرنے کےلئے 11 ارب ڈوزز کی ضرورت ہے۔