Aaj TV News

BR100 4,599 Increased By ▲ 13 (0.29%)
BR30 17,334 Decreased By ▼ -78 (-0.45%)
KSE100 44,888 Decreased By ▼ -36 (-0.08%)
KSE30 17,696 Decreased By ▼ -30 (-0.17%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,381,152 6,357
DEATHS 29,122 17
Sindh 529,218 Cases
Punjab 466,164 Cases
Balochistan 33,975 Cases
Islamabad 120,128 Cases
KP 185,683 Cases

سینٹ اجلاس میں اپوزیشن نے بجلی کے ملک گیر بلیک آئوٹ کے اصل حقائق سامنے لانے کا مطالبہ کردیا۔

سینیٹررضاربانی کا کہنا ہے کہ بجلی کے بلیک آؤٹ کے معاملے پرمتعلقہ وزیرکو مستعفی ہونا چاہیے۔وفاقی وزیرمواصلات مراد سعید نے کہاکہ نوازشریف اتنے اچھے تھےتو آج وہ اور ان کے بچے اشتہاری کیوں ہیں۔یہ ان کیمرہ این آر او مانگتے ہیں ۔

سینٹ اجلاس کا اجلاس چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت ہوا ۔جس میں حکومت کی جانب سے پارلیمان اورصوبائی حقوق کو سلب کرنے کے بارے اپوزیشن کی تحریک پربحث ہوئی ،

اپوزیشن ارکان نے حکومت پر کڑی تنقید کی ۔ پیپلزپارٹی کی سینیٹرشیری رحمان نے کہا کہ عوام نے حکومت کو مسترد کردیاہے، این آراو ہم نہیں حکومت مانگ رہی ہے۔

میاں رضا ربانی نے کہاکہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ پارلیمان مرچکی ہے، بجلی کے بلیک آئوٹ کے اصل حقائق سامنے آنے چاہئیں اورمتعلقہ وزیر کو مستعفی ہونا چاہیے۔

مسلم لیگ ن کے سینیٹرپرویزرشید نے کہاکہ برطانوی عدالت کے حکم پرپاکستان کے لندن کے بینکوں سے سات سو کروڑ روپے براڈ شیٹ کمپنی کوادا کیے گئے ہیں، کیا اس بارے میں کوئی چیئرمین نیب سے سوال کرے گا۔

وزیرمملکت برائے پارلیمانی امورعلی محمد خان نے پارلیمنٹ اورصوبوں کے حقوق غصب کرنے کے بارے میں اپوزیشن کے الزامات کومستردکردیا ۔

وزیرمواصلات مراد سعید نے کہا کہ یہ ان کیمرہ این آراومانگتے ہیں، اگرنوازشریف اتنے اچھے تھے تو آج وہ اشتہاری کیوں ہیں؟

بحث میں سینیٹرفیصل جاوید، کرشناکماری، محسن عزیزاورعابدہ عظیم سمیت دیگر ارکان نے بھی حصہ لیا ۔ بعد ازاں سینیٹ کا اجلاس جمعہ تک ملتوی کردیا گیا ۔