Aaj.tv Logo

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کا اجلاس کل طلب کرلیا، جس میں 14 نکاتی ایجنڈے پر غور ہوگا.

وفاقی کابینہ کا اجلاس منگل کو طلب کرلیا گیا جو 14 نکاتی ایجنڈے پر مشتمل ہے، جس میں آڈیٹر جنرل آف پاکستان (اے جی پی) کی جانب سے ریگولیٹری اتھارٹیز کے کاموں کا آڈٹ بھی شامل ہے۔

بزنس ریکارڈر کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہونے والے اجلاس میں کامرس ڈویژن کی جانب سے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے درآمد کی جانے والی گاڑیوں کی تاخیر سے متعلق معافی کا جائزہ لیا جائے گا۔

اجلاس میں کاروبار کے قواعد 1973 میں ترمیم کیلئے فنانس ڈویژن کی سمری کے ساتھ ساتھ فرسٹ کیلئے استثنیٰ کی درخواست پر غور کیا جائے گا۔

ویمن بینک لمیٹڈ مالی سال 2019 اور 2020 کے ششماہی جائزے پر قانونی آڈیٹرز کے ذریعے اور (آڈٹ فرم) کو مالی سال 2021 کے لیے اپنا آڈٹ کرنے کیلئے برقرار رکھے گا جو ان کا چھٹا سال ہوگا۔

کابینہ فنانس ڈویژن کی ایک اور تجویز پر بھی غور کرے گی جس میں منیجنگ ڈائریکٹر/چیف ایگزیکٹو آفیسر کے ایس ایس ایل کی تقرری کیلئے نام کی منظوری کیلئے داخلہ ڈویژن کی تجویز پر بھی غور کیا جائے گا تاکہ غیر ملکیوں کو پاکستان سے باہر جانے کیلئے ایمنسٹی اسکیم کیلئے تجویز کیا جائے۔

اس کے ساتھ ہی سیکشن کے تحت مجاز افسر کے نوٹیفکیشن پر بھی غور کیا جائے گا۔

مزید براں پاکستان اسینشل سروسز (مینٹیننس) ایکٹ 1952 کا 7(3) اور افراد کی اسمگلنگ سے متعلق پروٹوکول میں پاکستان کا الحاق۔

وفاقی کابینہ کےاجلاس میں میری ٹائم افیئرز ڈویژن کی جانب سے مینیجنگ ڈائریکٹر کورنگی فشریز ہاربر اتھارٹی کراچی کے عہدے کا اضافی چارج ڈائریکٹر جنرل پورٹس اینڈ شپنگ ونگ کراچی کو تفویض کرنے کی تجویز بھی پیش کی جائے گی اور نیشنل ہیریٹیج اینڈ کلچر ڈویژن کی تجویز کی توثیق کی جائے گی۔

اس کے علاوہ ثقافتی اظہار کے تنوع کے تحفظ اور فروغ پر یونیسکو 2005 کنونشن اور پاکستان ریلوے فریٹ ٹرانسپورٹیشن کمپنی کے بورڈ کی دوبارہ تشکیل کے ساتھ ہی ریلوے کنسٹرکشنز پاکستان لمیٹڈ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی تشکیل نو کے لیے ریلوے ڈویژن کا خلاصہ کیا جائے گا۔

کابینہ کے اجلاس میں مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی ڈویژن اور کیبنٹ ڈویژن کی طرف سے پیش کردہ بین المذاہب ہم آہنگی پالیسی کے مسودے پر بھی غور کیا جائے گا۔

جبکہ اس کی منظوری آڈیٹر جنرل آف پاکستان (اے جی پی) اور قومی اداروں کے ذریعے ریگولیٹری اتھارٹیز کے کاموں کے آڈٹ کے حوالے سے پیش کی جائے گی۔

علاوہ ازیں الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کی سالانہ رپورٹ، 2020-21 اور صنعت کی حالت رپورٹ، 2021 بھی اجلاس میں پیش کی جائے گی۔