Aaj TV News

BR100 4,470 Decreased By ▼ -201 (-4.31%)
BR30 17,618 Decreased By ▼ -1217 (-6.46%)
KSE100 43,709 Decreased By ▼ -1660 (-3.66%)
KSE30 16,871 Decreased By ▼ -705 (-4.01%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,285,631 377
DEATHS 28,745 8
Sindh 476,017 Cases
Punjab 443,240 Cases
Balochistan 33,488 Cases
Islamabad 107,765 Cases
KP 180,146 Cases

افغانستان میں ہیلی کاپٹر سے لٹکے شخص کی حقیقت

04 ستمبر 2021
افغانستان میں یہ تاثر عام ہے کہ طالبان ایک بار پھر نوے کی دھائی کی طرز پرسخت گیر طرز حکمرانی پر چل رہے ہیں (تصویر: اسکرین گریب)
افغانستان میں یہ تاثر عام ہے کہ طالبان ایک بار پھر نوے کی دھائی کی طرز پرسخت گیر طرز حکمرانی پر چل رہے ہیں (تصویر: اسکرین گریب)

گزشتہ دنوں افغانستان میں پرواز کرتے ہیلی کاپٹر سے لٹکے ایک شخص کے ویڈیو کلپ نے دُنیا میں ہلچل مچا دی تھی۔ کچھ لوگوں نے ہیلی کاپٹر سے لٹکے شخص کو "لاش" قرار دیا۔

یہ فوٹیج جب سوشل میڈیا پر پھیلی تو بہت سے افغان شہریوں نے طرح طرح کے سوالات اٹھائے کہ آخر طالبان ایک شخص کو اڑتے ہوئے ہیلی کاپٹر کے ساتھ لٹکا کر کیا کرنا چاہتے ہیں۔

بعض لوگوں نے اسے طالبان کے ہاتھوں "مجرموں" کو پھانسی دینے کے سابقہ واقعات کا تسلسل قرار دیا۔

تاہم اطلاعات کے مطابق ہیلی کاپٹر سے لٹکے شخص کی ویڈیو قندھار کی ہے۔ اسے ایک کثیر منزلہ عمارت کی چھت پر طالبان کا جھنڈا گاڑھنے کے لیے ہیلی کاپٹر کے ساتھ لٹکا کر لے جایا گیا۔ یہ کوئی پھانسی کا کیس نہیں۔

تاہم اس واقعے کا ایک علیحدہ ویڈیو کلپ میں واضح طور پر اس شخص کو زندہ دیکھا جاسکتا ہے جو ہوا میں اشارے بھی کررہا ہے۔

یہ واقعہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف افغانستان میں یہ تاثر عام ہے کہ طالبان ایک بار پھر نوے کی دھائی کی طرز پرسخت گیر طرز حکمرانی پر چل رہے ہیں اور وہ معمولی خلاف ورزی پر بھی لوگوں کو موت جیسی کڑی سزائیں دینے کی پالیسی پرعمل پیرا ہیں۔