Aaj.tv Logo

اسلام آباد:مسلم لیگ (ن)نے پارلیمنٹ سمیت ہر فورم پر میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو روکنے کا فیصلہ کرلیا اور میڈیا سے متعلق کالا قانون روکنے کیلئے اپوزیشن کی مشترکہ کمیٹی بنانے کا بھی فیصلہ کرلیا گیا۔

مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی زیرصدارت میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی سے متعلق پارٹی کا مشاورتی اجلاس ہوا،جس میں مسلم لیگ ن نے پارلیمنٹ سمیت ہر فورم پر میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو روکنے کا فیصلہ کیا۔

میڈیا سے متعلق کالا قانون روکنے کیلئے اپوزیشن کی مشترکہ کمیٹی بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیا جبکہ کمیٹی بل کے قانونی اور دیگر پہلوؤں کا جائزہ لے کر حکمت عملی تجویز کرے گی۔

شہباز شریف نے پارٹی رہنماؤں کو صحافتی تنظیموں سے ہونے والی ملاقات سے آگاہ کیا۔ اس موقع پر قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا کہ میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا راستہ روکنے کیلئے تمام قانونی آپشنز کا استعمال کریں گے، میڈیا کی تمام نمائندہ تنظیموں نے میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو مسترد کیا ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ پی ایم ڈی اے ایک کالا قانون ہے اور اسے ہر فورم پر روکیں گے، نام نہاد قانون کی تیاری میں متعلقہ فریقین سے مشاورت نہیں ہوئی۔

قائد حزب اختلاف نےمزید کہا کہ قانون کی تیاری میں متعلقہ فریقین سے تجاویز اور آرا بھی نہیں لی گئیں اور حکومت کا مقصد قانون سازی یا امور بہتر بنانا نہیں بلکہ میڈیا کو اپنا تابع فرمان بنانا ہے۔

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہا کہ صحافتی تنظیموں کی رائے اس کالے قانون کی تیاری میں شامل ہی نہیں ہے لیکن اگر یہ کالا قانون منظور ہوا تو ملک سے اظہار رائے کی آزادی کا وجود مٹ جائے گا، آئین میں دی گئی اظہار رائے کی آزادی سلب کرنے کا راستہ ہر قیمت پر روکنا ہو گا۔