Aaj TV News

BR100 4,644 Decreased By ▼ -89 (-1.89%)
BR30 20,295 Decreased By ▼ -45 (-0.22%)
KSE100 45,304 Decreased By ▼ -240 (-0.53%)
KSE30 17,708 Decreased By ▼ -103 (-0.58%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,269,806 572
DEATHS 28,392 6
Sindh 468,164 Cases
Punjab 439,307 Cases
Balochistan 33,204 Cases
Islamabad 106,749 Cases
KP 177,553 Cases

گرین لینڈ کی سطح سمندر سے 2 میل بلند چوٹی پر موجود وسیع و عریض پٹی پر بارش نے ماہرین کو حیران کر دیا۔ یہ زمین کا ایسا حصّہ ہے جہاں پہلی بار بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ ماہرین اس غیر متوقع بارش کو موسمیاتی تبدیلیوں کا نتیجہ قرار دے رہے ہیں۔

بزنس انسائیڈر کے مطابق 1950 سے اس جگہ کا ریکارڈ مرتب کیا جارہا ہے، جہاں آج تک بارش ریکارڈ نہیں ہوئی تھی وہاں آسمان سے پانی برسنے نے سائنس دانوں کو حیران اور پریشان کر دیا۔

اس 3216 میٹر بلند چوٹی پر عموماً درجہ حرارت نقطہِ انجماد سے نیچے ہوتا ہے، مگر حال ہی میں وہاں گرم ہوا کے نتیجے میں شدید بارش ہوئی اور 7 ارب ٹن پانی برفانی پٹی پر برس پڑا۔

یو ایس نیشنل سائنس فاؤنڈیشن کے ویدر اسٹیشن نے 14 اگست کو اس مقام پر بارش کو برستے دیکھا مگر ان کے پاس جانچ پڑتال کے لیے پیمانہ ہی نہیں تھا کیونکہ یہاں کبھی بارش نہیں ہوئی۔

گرین لینڈ کے اس مقام پر 3 دن تک درجہ حرارت اوسط سے 18 سینٹی گریڈ زیادہ رہا جس کی وجہ سے بیشتر علاقوں میں برف پگھلتے دیکھی گئی۔

گرین لینڈ میں جولائی میں بھی بڑے پیمانے پر برف پگھلی تھی اور 2021 گزشتہ صدی کا چوتھا سال بن گیا جب اس طرح بڑے پیمانے پر برف پگھلی۔ اس سے قبل 1995، 2012 اور 2019 میں ایسا ہوا تھا۔