Aaj TV News

BR100 5,093 Decreased By ▼ -3 (-0.06%)
BR30 25,710 Decreased By ▼ -45 (-0.17%)
KSE100 47,312 Decreased By ▼ -6 (-0.01%)
KSE30 18,963 Decreased By ▼ -11 (-0.06%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,020,324 4,497
DEATHS 23,209 76
Sindh 374,434 Cases
Punjab 354,904 Cases
Balochistan 30,019 Cases
Islamabad 86,602 Cases
KP 142,799 Cases

وفاقی ترقیاتی بجٹ کا حجم 900 ارب روپے ہوگا ۔ وفاقی وزارتوں کو 672 ارب روپے کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔

آئندہ مالی سال کے ترقیاتی بجٹ کی دستاویزکے مطابق ایوی ایشن ڈویژن کیلئے 4 ارب 29 کروڑ اور کابینہ ڈویژن کو 56 ارب2کروڑ روپے کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔

موسمیاتی تبدیلی کا ترقیاتی بجٹ 14ارب روپے اورکامرس ڈویژن کو 30 کروڑروپے کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔ دستاویزکے مطابق وزارت تعلیم و تربیت کیلئے9 ارب روپے اوروزارت خزانہ ترقیاتی کاموں پر94ارب روپے خرچ کرے گی ۔

ہائر ایجوکیشن کمیشن کو 37 ارب روپے اور ہاؤسنگ و تعمیرات کیلئے 14 ارب94 کروڑ کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔

وزارت انسانی حقوق کوترقیاتی بجٹ کی مد میں22 کروڑ اور وزارت صنعت و پیداوار 3 ارب کا ترقیاتی بجٹ خرچ کرے گی ۔

دستاویز کے مطابق وزارت اطلاعات کا ترقیاتی بجٹ 1 ارب 84 کروڑ روپے اور وزارت آئی ٹی 8 ارب روپے ترقیاتی کاموں پرخرچ کرے گی ۔ بین الصوبائی رابطہ کیلئے 2 ارب 56 کروڑ اور وزارت داخلہ کیلئے ترقیاتی بجٹ 22 ارب روپے کی تجویز دی گئی ہے ۔

امورکشمیر اورگلگت بلتستان کیلئے61ارب اور وزارت قانون و انصاف کے لیے 6 ارب کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔

دستاویز کے مطابق امور جہازرانی و میری ٹائم کیلئے 4 ارب 95 کروڑاور وزارت انسداد منشیات کیلئے 33 کروڑ کا ترقیاتی بجٹ تجویز کیا گیا ہے ۔

وزارت غذائی تحفظ کے لیے 12 ارب اور نیشنل ہیلتھ سروسز کیلئے 22ارب82 کروڑ ترقیاتی بجٹ مقرر کیا گیا ہے۔

دستاویز میں کہا گیا کہ قومی ورثہ و ثقافت کیلئے 4 کروڑ 59 لاکھ اور پٹرولیم ڈویژن کو 3 ارب 7 کروڑ روپے کا ترقیاتی بجٹ ملے گا ۔

وزارت منصوبہ بندی کے لیے 99 ارب 25 کروڑ اور سماجی تحفظ کے لیے 11 کروڑ 89 لاکھ کا ترقیاتی بجٹ مختص کیا گیا ہے ۔

دستاویز کے مطابق ریلوے ڈویژن کیلئے 30 ارب روپے اورسائنس و ٹیکنالوجی کیلئے 8 ارب 11 کروڑ کا ترقیاتی بجٹ تجویز کیا گیا ہے ۔ آبی وسائل کے لیے 110 ارب روپے اور این ایچ اے کیلئے 113 ارب 95 کروڑ روپے کا ترقیاتی بجٹ ہوگا ۔

پیپکو کے لیے 53 ارب روپے سے زائد اور دیگر ضروریات و ایمرجنسی کیلئے 60 ارب روپے مختص کیا ہے۔