Aaj TV News

BR100 4,585 Decreased By ▼ -11 (-0.25%)
BR30 17,412 Decreased By ▼ -370 (-2.08%)
KSE100 44,924 Decreased By ▼ -94 (-0.21%)
KSE30 17,727 Decreased By ▼ -21 (-0.12%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,374,800 7,195
DEATHS 29,105 8
Sindh 526,899 Cases
Punjab 464,431 Cases
Balochistan 33,941 Cases
Islamabad 118,292 Cases
KP 185,340 Cases

چین نے بیرون ملک سفر کرنے والے اپنے شہریوں کے لیے صحت کے سرٹیفیکیٹ کے پروگرام کا آغاز کیا ہے جس میں واضح ہوگا کہ صارف نے ویکسین کب لگوائی اور ان کے کورونا وائرس ٹیسٹ کے کیا نتائج رہے ہیں۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق یہ ڈیجیٹل سرٹیفکیٹ چینی سوشل میڈیا پلیٹ فارم وی چیٹ پر ایک پروگرام کے ذریعے دستیاب ہوگا جو پیر کو لانچ کیا گیا ہے۔

چین کی وزارت خارجہ کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ اس سرٹیفیکیٹ کو اس لیے جاری کیا جائے گا تاکہ ’دنیا بھر میں معاشی بحالی اور سرحد پار سفر کی سہولت کو فروغ دیا جا سکے۔‘

یہ سرٹیفکیٹ چین آنے اور وہاں سے باہر جانے کے لیے ہے، اور ابھی صرف چینی شہریوں کے لیے دستیاب ہے، یہ لازمی قرار نہیں دیا گیا ہے۔

ابھی تک اس بات کا کوئی اشارہ نہیں ملا ہے کہ دیگر ممالک میں حکام چینی مسافروں کے آنے کے وقت اس سرٹیفکیٹ کا استعمال کریں گے۔

اس سرٹیفکیٹ کو دنیا کا پہلا ’وائرس پاسپورٹ‘ قرار دیا جا رہا ہے۔

امریکہ اور برطانیہ ان ممالک میں سے ہیں جو اس طرح کے اجازت ناموں کے استعمال پر غور کر رہے ہیں۔

یورپی یونین ایک ویکسین ’گرین پاس‘ پر کام کر رہا ہے جو شہریوں کو بیرون ملک اور رکن ممالک کے درمیان سفر کرنے کی اجازت دے گا۔

چینی سرکاری میڈیا ژنہوا کے مطابق چین کے پروگرام میں ایک کیو آر کوڈ ہوگا جس سے ہر ملک کو سرٹیفکیٹ رکھنے والے مسافر کی صحت کی معلومات حاصل ہو سکیں گی۔

چین میں وی چیٹ اور دیگر چینی سمارٹ فون ایپز میں موجود ’صحت کے کیو آر کوڈز‘ پہلے سے ہی مقامی نقل و حمل کے ذرائع استعمال کرنے کے لیے لازمی ہیں۔

اس ایپ سے صارف کی لوکیشن پتا چل سکتی ہے اور ایک ’گرین کوڈ‘ جاری ہوتا ہے جو بتاتا ہے کہ صارف ٹھیک صحت میں ہیں۔

یہ گرین کوڈ اس صورت میں جاری ہوتا ہے جب صارف کسی کورونا وائرس کے مریض کے قریب نہ گیا ہو نہ ہی وائرس سے متاثرہ علاقے گیا ہو۔